آپ کے ویکسین لگوانے کے بعد

مندرجہ ذیل معلومات کینیڈا کی حکومت اور دیگر سائنسی اور طبی وسائل کا استعمال کرنے والے طبی پیشہ ور افراد اور صحت عامہ کے ماہرین کی جانب سے اس ویب سائٹ کے لئے تیار کی گئی تھیں۔ اس کا مقصد طبی مشورہ نہیں ہے۔ ویکسین کے حوالے سے آپ کے جو بھی سوالات ہوں، ان کے متعلق کسی مستند صحت کے نگہداشت فراہم کنندہ سے مشورہ کریں۔

ہم یقینی طور پر نہیں بتا سکتے، لیکن یہ ممکن ہے کہ خواہ آپ کو ویکسین لگی ہو تب بھی آپ میں وائرس موجود ہوسکتا ہے۔ ہمیں یہ معلوم ہے کہ ویکسین لوگوں کو وائرس سے بیمار ہونے سے محفوظ رکھے گی، لیکن یہ ممکن ہے کہ اگرچہ آپ کو مدافعیت مل چکی ہے لیکن آپ کو اب بھی وائرس لگ سکتا ہے اور دوسروں کے لیے متعدی ہوسکتے ہیں۔ کلینیکل ٹرائلز کے جاری رہنے اور حقیقی دنیا کے شواہد سامنے آنے سے ہمیں مزید معلومات حاصل ہوں گی۔ اسی اثناء میں، کافی تعداد میں کینیڈیئنز کو ویکسین لگنے تک ہمیں اپنے ماسک پہننا، جسمانی فاصلہ برقرار رکھنا، اور صحت عامہ کی سفارشات پر عمل کرنا جاری رکھنا ہوگا۔

ویکسینیشن کی دوسری خوراک کے بعد جسم کے مدافعیت پیدا کرنے میں تقریباً دو ہفتے لگتے ہیں۔ ویکسین لگوانے سے بالکل پہلے یا بالکل بعد میں وائرس سے کوئی بھی متاثر ہوسکتا ہے، کیونکہ ویکسین کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے مناسب وقت نہیں ملا۔

یہ بھی ایک وجہ ہے کہ ویکسینز کی دو خوراکوں کا پورا سلسلہ درکار ہوتا ہے۔

19 کی ویکسینز کی ابتدائی اثر پذیری پہلی خوراک کے بعد پہلے ہی کافی زیادہ ہے (%92-80) اور کم از کم چند ماہ تک باقی رہتی ہے۔

ایک سے زائد خوراکوں کی حامل ويکسينز ميں ايک خوراک کے بعد کا تجربہ تجويز کرتا ہے کہ مسلسل تحفظ چھ ماه يا مزيد عرصے تک ره سکتا ہے۔ حقیقت میں، متعدد مطالعات سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ آپ جتنا زیادہ انتظار کریں گے آپ کو اتنا ہی زيادہ بہتر بوسٹر مدافعتی ردعمل حاصل ہوگا۔ اس لئے، اس کے پیچھے سائنس ہے۔

اور زياده تر ويکسينز ميں اينٹی باڈيز کی سطح (مدافعيت) وقت کے ساتھ کم ہوجاتی ہے اور تحفظ کی سطح سے اچانک نيچے نہيں گرتی ہے۔ حتیٰ کہ مہينوں يا سالوں بعد، ايک اور ويکسين اينٹی باڈيز (مدافعت) کو زياده سطح تک بڑھا سکتی ہے، جس سے تحفظ کا لمبا دورانیہ ممکن ہے۔

اب جب ہمارے پاس کینیڈا میں ویکسین کی مزید قابل اعتماد فراہمی موجود ہے، تو خوراکوں کے درمیان دورانیہ کم ہو کر آٹھ ہفتے ہوگیا ہے۔

جی ہاں، فی الحال، جب تک کہ پبلک ہیلتھ ایجنسی آف کینیڈا (کینیڈا کی صحت عامہ کے ادارے)تعین کرے کہ ماسک پہننے اور سماجی دوری ختم کرنے کا صحیح وقت کیا ہے۔ ايسا اس ليے ہے کہ ويکسين کو پوری طرح سے مؤثر ہونے (مدافعيت پيدا کرنے) ميں متعدد ہفتے لگتے ہيں اور زياده سے زياده تحفظ صرف زیادہ سے زیادہ لوگوں کے لئے Pfizer-BioNTech، Moderna اور AstraZeneca کی COVID-19 ويکسينز کی دوسری خوراک کی تکميل کے بعد ہی حاصل کیا جا سکتا ہے۔

ہمیں ابھی تک معلوم نہیں ہے کہ ویکسین لگوانے والے لوگوں میں تحفظ کتنے عرصے تک رہتا ہے۔ mRNA پر کی جانے والی تحقیق فی الحال دکھاتی ہے کہ ویکسین لگوانے والے لوگوں میں COVID-19 سے تحفظ کم از کم چھ ماہ تک کافی مضبوط مدافعیت رہی ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ مدافعیت کچھ عرصہ تک برقرار رہے گی، لیکن اس کے لیے وقت کے ساتھ تحقیق درکار ہو گی۔

فی الحال، ابھی ہمیں قطعی یقین نہیں ہے کہ آیا مدافعیت ایک سال یا دس سال رہے گی، یا کسی موقع پر اضافی خوراک کی ضرورت ہوگی۔

کی ویکسین کے بعد جسم کو مدافعیت پیدا کرنے میں عموماً چند ہفتے لگتے ہیں۔ لیکن یاد رکھیں کہ COVID-19 کی Pfizer-BioNTech، Moderna اور AstraZeneca ویکسینز سے بہترین مدافعیت حاصل کرنے کے لیے دو خوراکیں درکار ہوتی ہیں۔ COVID-19 کی Johnsons & Johnson ویکسین کی صرف ایک خوراک درکار ہوتی ہے۔

ویکسینیشن کے بعد عارضی معمولی یا اوسط درجے کے ضمنی اثرات عام ہیں، بشمول:

  • درد، سوزش، جلن، خارش یا انجیکشن کے مقام پر سوجن،
  • تھکاوٹ،
  • سر درد،
  • متلی،
  • پٹھوں یا جوڑوں کا درد، اور
  • معمولی بخار یا کپکپی طاری ہونا۔

یہ اس بات کی عام علامات ہیں کہ آپ کا جسم تحفظ پیدا کر رہا ہے اور یہ علامات چند دنوں میں ختم ہوجائیں گی۔

اگر آپ کی علامات نمایاں ہیں یا بدتر ہو رہی ہیں تو اپنے صحت کے نگہداشت کنندہ سے مشورہ کریں۔ اگر یہ COVID-19 جیسی ہیں تو آپ کو اپنا ٹیسٹ کروانا چاہیے اور ٹیسٹ کے نتائج دستیاب ہونے تک اپنے آپ کو الگ تھلگ کر لینا چاہیے۔

شاذونادر طور پر ہی، اینا فلیکسس نامی سنگین ضمنی اثر لاحق ہوسکتا ہے۔ یہ عموماً ویکسینیشن کے چند منٹ یا ایک گھنٹے بعد ہوتا ہے۔ اس لیے، COVID-19 ویکسین لگوانے والے افراد کو ویکسین لگوانے کے کم از کم 15 منٹ بعد تک وہیں رہنا چاہیے تاکہ صحت کے نگہداشت کنندگان کسی سنگین ردعمل کے حوالے سے افراد کی نگرانی کرسکیں۔

ضمنی اثرات اس بات کی نشاندہی نہیں ہیں کہ آیا ویکسین کارگر ہے یا نہیں۔

یہ سچ ہے کہ ضمنی اثرات اس بات کی عمومی علامت ہیں کہ ویکسین کارگر ہے اور آپ کا جسم تحفظ پیدا کر رہا ہے۔ تاہم، اس کا یہ مطلب نہیں ہے کہ اگر آپ کو ضمنی اثرات لاحق نہیں ہوئے تو آپ کو پریشان ہونا چاہیے۔ مثال کے طور پر، mRNA ویکسینز نے کلینیکل ٹرائلز میں 90% سے زائد لوگوں میں مدافعیت پیدا کی، لیکن 50% سے زیادہ افراد نے کسی ضمنی اثر کے متعلق نہیں بتایا۔ دوسرے لفظوں میں، زیادہ تر لوگوں کو کسی ردعمل کا سامنا نہیں ہوا لیکن ان میں مکمل مدافعیت موجود تھی۔

تو اگر آپ کو اپنی COVID-19 کی ویکسین کے بعد کوئی ضمنی اثر محسوس نہیں ہوا تو آپ کو اس کے متعلق پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے — آپ کو اب بھی وہی تحفظ حاصل ہوگا جو ضمنی اثرات کا سامنا کرنے والے کو ہوگا!