آپ کے ویکسین لگوانے سے قبل

مندرجہ ذیل معلومات کینیڈا کی حکومت اور دیگر سائنسی اور طبی وسائل کا استعمال کرنے والے طبی پیشہ ور افراد اور صحت عامہ کے ماہرین کی جانب سے اس ویب سائٹ کے لئے تیار کی گئی تھیں۔ اس کا مقصد طبی مشورہ نہیں ہے۔ ویکسین کے حوالے سے آپ کے جو بھی سوالات ہوں، ان کے متعلق کسی مستند صحت کے نگہداشت فراہم کنندہ سے مشورہ کریں۔

جی ہاں، ماضی میں COVID-19 کے شکار افراد کو بھی دو خوراکوں کے ساتھ مکمل طور پر ویکسینیٹڈ ہونا ضروری ہے۔ ماہرین کو اب تک یہ بات معلوم نہيں ہوئی ہے کہ COVID-19 سے صحتیاب ہونے کے بعد آپ کو دوبارہ بیمار ہونے کے خلاف کتنے عرصے تک تحفظ حاصل ہوگا۔ ویکسینیشن آپ کو بیماری کے تجربے کے بغیر اینٹی باڈی کا ردعمل تخلیق کرکے تحفظ فراہم کرنے میں معاون ثابت ہوگا۔

اگر آپ کو حال ہی میں COVID-19 ہوا تھا،تو آپ کو تب تک انتظار کرنا چاہيے جب تک کہ ويکسين لينے سے قبل آپ بہتر محسوس کرنا شروع کرديں اور اپنی عليحدگی کا دورانيہ ختم ہوجائے۔

اگر آپ کو پہلی خوراک کے طور پر mRNA ویکسین (Pfizer-BioNTech یا Moderna) لگائی گئی تھی تو آپ کو دوسرے خوراک کے طور پر mRNA ویکسین کی پیشکش کی جائے گی۔ بہتر یہی ہوگا کہ آپ کو اُسی قسم کی ویکسین موصول ہو جو آپ کو پہلی دفعہ لگائی گئی تھی، علاوہ اس صورت میں کہ وہ آسانی سے دستیاب نہ ہو یا نامعلوم ہو۔ اس صورت میں دوسری قسم کی mRNA ویکسین لگوانے میں کوئی حرج نہيں ہے۔ دونوں ہی مساوی طور پر محفوظ اور مؤثر ہیں۔

اگر آپ کو پہلی خوراک کی شکل میں AstraZeneca موصول ہوا ہو تو آپ دوسری خوراک کے طور پر بھی AstraZeneca کا انتخاب کرسکتے ہيں، لیکن NACI اب دوسری خوراک کے طور پر mRNA ویکسین کی سفارش کر رہے ہيں۔

کينيڈا ميں استعمال کے ليے منظور شده تمام ويکسينز مساوی اور مؤثر طور پر ہسپتال میں داخل ہونے اور شديد بيمار ہونے کو کم کرتی ہيں، اور تمام ويکسينز COVID-19 سے موت کی روک تھام ميں تقريباً %100 مؤثر ہيں۔

اہم بات یہ ہے کہ آپ کو مکمل تحفظ کے لئے دو خوراکوں کے ساتھ ويکسين لگوانے کا انتظار نہيں کرنا چاہيے۔ وائرس کے نئے متغيرات ابھر رہے ہيں جو مزید کیسز، ہسپتال میں داخلے اور اموات کا باعث بن رہے ہيں، اور وسيع پيمانے پر ويکسينيشن ہی اسے روکنے کا واحد طريقہ ہے۔

ویکسین لینے والے ہر فرد کو اب بھی صحت عامہ کی ہدایات پر عمل کرنا ہو گا۔ آپ کے ویکسین لگوانے کے بعد، احتیاطی اقدامات پر عمل جاری رکھنا اب بھی نہایت اہم ہو گا، بشمول اپنے ہاتھ دھونا، محفوظ جسمانی فاصلہ برقرار رکھنا، ماسک پہننا اور بیمار ہونے پر گھر رہنا۔ یہ کئی وجوہات کے باعث اہم ہے:
کی ویکسین سے تحفظ حاصل کرنے میں آپ کے جسم کو کم از کم دو ہفتے لگتے ہیں۔ اس کا مطلب ہے کہ اگر آپ کا ویکسین لگوانے سے قبل COVID-19 سے سامنا ہوا ہے، ویکسین لگوانے کے دو ہفتے بعد، تب بھی آپ COVID-19 سے بیمار ہو سکتے ہیں۔ تو اگر آپ کو ویکسین لگوانے کے بعد COVID-19 کی علامات لاحق ہوں تو ٹیسٹ کروائیں۔
ویکسین ہر کسی کو COVID-19 سے متاثر ہونے سے نہیں بچائے گی۔ جن لوگوں کو وائرس متاثر کرتا ہے، اس کا کافی کم امکان ہے کہ انہیں شدید بیماری ہوگی۔
دستیاب ویکسینز کافی مؤثر ہیں، لیکن آپ ان افراد کی معمولی تعداد میں شامل ہوسکتے ہیں جن میں مدافعیت نہیں ہوتی۔ اگر آپ لوگوں سے قریبی فاصلے سے ملتے ہیں یا صحت عامہ کے اقدامات پر عمل نہیں کرتے تب بھی آپ COVID-19 کے پھیلاؤ کا باعث بن سکتے ہیں۔

نہیں، COVID-19 کی ویکسین لگوانا مکمل طور پر رضاکارانہ ہے۔ COVID-19 کی ویکسین لگوانا یا نہ لگوانا آپ کا اختیار ہے۔

رہائشی حیثیت سے قطع نظر کینیڈا کے تمام رہائشی COVID-19 کی ویکسین کے لیے اہل ہیں۔ آپ کے پاس درست PHN ہونا ضروری نہیں ہے۔ فی الحال، صرف 18 سالہ یا اس سے بڑے افراد Moderna، AstraZeneca اور Johnson & Johnson ویکسینز لگوانے کے اہل ہیں۔ 12 سالہ اور اس سے بڑے افراد Pfizer-BioNTech ویکسین لگوانے کے اہل ہیں۔